دوسرا پیٹرول بم گرنے کو تیار

جہاں ایک طرف ایل این جی ٹرمینل بند ہونے سے ملک میں سی این جی بحران کھونٹا گاڑھ کر بیٹھا ہے اور لوگ  نقل وحمل کے لیے پیٹرول پر انحصار کر رہےہیں۔

وہاں اوگرا نے ان کی  پیٹرول تک رسائی کو بھی تکلیف دہ بنانے کے لیے  قیمتوں کی نئی سمری تیار کر لی ہے اور اسے  منظوری کے لیےپیٹرولیم ڈویژن کو ارسال بھی کردیا ہے۔

اوگرا کی سمری میں ہائی اسپیڈ ڈیزل 3 روپے فی لیٹر اور پیٹرول کی قیمت میں ایک ہی وقت میں 6 روپے فی لیٹر اضافے کی تجویز پیش کی گئی ہے۔

دوسری جانب اوگرا کا کہنا ہے کہ پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں  میں یہ اضافہ 15 دن کے لیے تجویز کیا گیا ہے اور سمری پیٹرولیم لیوی کی موجودہ شرح کے مطابق تیار کی گئی ہے۔

واضح رہے اس وقت پیٹرول پر لیوی 4 روپے 80پیسے  فی لیٹر اور ہائی اسپیڈ ڈیزل پر5 روپے 14 پیسے فی لیٹر وصول کی جارہی ہے۔

معاشیات کے ماہرین کا کہنا ہے کہ لیوی مزید بڑھائی گئی تو پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ بھی یقینی طور پر ہوگا۔

لوگوں کی نظریں اب وزیر اعظم ہاؤس کی جانب ہیں کیونکہ قیمتوں میں اضافے کی حتمی منظوری وزیراعظم عمران خان دیں گے۔

فیصلہ آنے کے بعد اسکا اطلاق 30 جولائی  رات بارہ بجے ہوگا۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button