عید سے متعلق نئی پابندیوں کا اعلان

وفاقی حکومت نے منگل کے روز آنے والی عید الفطر کی تعطیلات کے دوران بڑھتے ہوئے کورونا وائرس کے کیسز میں مزید اضافہ کے خدشے کے پیش نظر سیاحت اور بین الصوبائی ٹرانسپورٹ پر مکمل پابندی سمیت نئی پابندیوں کا اعلان کیا ۔

کورونا کے باعث لگائی گئی نئی پابندیوں میں 5 سے 20 مئی تک پاکستان آنے والی پروازیں محدود کرنے کا فیصلہ اور 10 سے 15 مئی تک عید کی چھ چھٹیاں دینے کا فیصلہ بھی شامل ہے، پروازوں سے متعلق 18 مئی کو دوبارہ جائزہ لیا جائے گا۔

مزید یہ کہ چاند رات کو مہندی اسٹال ،جیولری اور کپڑوں کے بازار بھی بند رکھنے کا فیصلہ کیا گیا ہے، شہریوں کے لیے گھروں پر رہنے کی ہدایات جاری کردی گئیں۔ وزارت داخلہ کے مطابق تازہ پابندیوں میں 8 سے 16 مئی تک تمام سیاحتی مقامات ، ہوٹلوں ، ریستوراں ، خریداری مراکز ، پارکس ، ساحل اور دیگر عوامی مقامات کو بند کرنا بھی شامل ہے۔

سیاحتی مقامات خاص طور پر مری ، سوات ، اور شمالی گلگت بلتستان کے علاقوں کی قدرتی وادیوں کی طرف جانے والے ٹریول نوڈس جو عید کی چھٹیوں کے دوران ملک بھر سے سیکڑوں ہزاروں سیاحوں کو راغب کرتے ہیں ،  وہ بھی مذکورہ مدت کے دوران بند رہیں گے۔

سفری پابندیاں

عید کی تعطیلات کے دوران بین الصوبائی اور بین شہر آمدورفت پر مکمل پابندی ہوگی ، سوائے گلگت بلتستان کے رہائشیوں کے ، جنھیں اپنے آبائی شہر جانے کی اجازت ہوگی۔ بڑھتے ہوئے کورونا وائرس کے کیسز کی وجہ سے پاکستان اموات میں اضافے کے خلاف اور اسپتالوں میں آکسیجن بستر اور وینٹیلیٹر کی فراہمی  کے لئے مسلسل جدوجہد کررہا ہے۔

جمعرات کو ملک میں مزید 5،112 نئے کیسز اور 131 اموات ریکارڈ کی گئیں ، کیس مثبت آنے کی شرح 10 اعشاریہ 41 فیصد رہی، جبکہ کیسز اور اموات کی مجموعی تعداد بالترتیب 804،939 اور 17،811 ہوگئی۔

صحت سے متعلق وزیر اعظم کے مشیر ڈاکٹر فیصل سلطان نے صحافیوں کو بتایا کہ حکومت ملک میں آکسیجن کی صورتحال پر مسلسل نگرانی کر رہی ہے اور اسے بہتر بنانے کی کوشش کر رہی ہے۔

Back to top button