چہل قد می اور دو کچرے کے تھیلے

اسلام آباد میں ہری بھری مارگلہ پہاڑیوں میں صبح کی سیر برطانوی ہائی کمشنر کے لیے ایک خوشگوار تجربے کے بجائے ایک صفائی مہم ثابت ہوئی ۔

اسلام آباد میں تعینات برطانوی ہائی کمشنر کرسچن ٹرنر جو مارگلہ کی پگڈنڈی پر صبح کو سیر کے لئے گئے اور واپس آئے تو کچرے سے بھرے ہوئے دو بیگ انکے ساتھ تھے۔

انہوں نے یاد دلایا کہ صفائی نصف ایمان ہے۔

انہوں نے ٹوئٹر پر اپنی ایک تصویر پوسٹ کی جس میں دو تھیلے کوڑے سے بھرے ہوئے انکے ساتھ تھے ،بطور کیپشن انہوں نے لکھا کہ جمعہ کی صبح کی ایک اور سیر ، ایک اور دو تھیلے گندگی کے،صفائی نصف ایمن ہے۔

ڈی سی اسلام آباد حمزہ شفقت کو بھی پوسٹ میں متوجہ کیا ،تاہم اسلام آباد کے ڈپٹی کمشنر حمزہ شفقت نے ٹرنر کی اس سرگرمی کی تعریف کی جیسے کے ٹرنر کو اس کام کی ذمہ داری سونپی گئی تھی۔

عوام نے ڈی سی کے اس رد عمل پر خوب برہمی دکھائی جس کے بعد انہوں نے ایک اور پوسٹ کر کے اپنے سابقہ تاثر کی وضاحت دی کہ ان کی نیت کو غلط سمجھا گیا تھا لیکن آپ جانتے ہیں کہ وہ انٹرنیٹ کے بارے میں کیا کہتے ہیں ، آپ اس پر جو کہتے ہیں وہ ہمیشہ کے لئے زندہ رہتا ہے۔

وسیم اکرم

ڈی سی کے برعکس کرکٹر وسیم اکرم جو آلودگی اور آب و ہوا کی تبدیلی کے بارے میں آواز بلند کرتے رہتے ہیں اور اپنی اہلیہ شنیرا کے ساتھ ساحل سمندر کی صفائی کی سرگرمیوں میں حصہ لیتے ہیں ، انہیں احساس ہوا کہ اس علاقے میں کچرا پھینکنے والے مقامی لوگوں کے ساتھ ساتھ انتظامیہ کے لئے بھی صورتحال کتنی شرمناک ہے ، جن کے پاس اس کی صفائی کا کوئی بنیادی ڈھانچہ اور نظام موجود نہیں ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button