انتالیس بیویاں رکھنے والے انسان فوت ہوگئے

انڈیا کی ایک ریاست کے وزیر اعلی نے بتایا کہ ایک 76 سالہ شخص جس کی 39 بیویاں اور 94 بچے تھے اور کہا جاتا ہے کہ وہ دنیا کے سب سے بڑے کنبہ کا سربراہ بھی تھا شمال مشرقی ہندوستان میں ان کی موت ہوگئی ہے ۔

وہاں کے وزیراعلی نے بتایا کے وہ یہاں ایک نام سے جانے جاتے تھے ، ان کا نام زیونا تھا ، اور وہ ایک مقامی عیسائی فرقے کے سربراہ بھی تھے ، جو بہت سی ازواج رکھنے کی اجازت دیتا ہے ، اتوار کے روز ان کی موت ہوگئی۔

مقامی ذرائع ابلاغ کے مطابق ، مجموعی طور پر 167 افراد کے ساتھ ، یہ خاندان دنیا کا سب سے بڑا خاندان ہے ، اس کا اندازہ آپ اس بات سے بھی لگا سکتے ہیں کہ جب آپ انکے پوتے پوتیوں کی گنتی کرتے ہیں ، تو ان میں سے زیونا کی سب سے بڑی پوتی 33 سالہ ہے۔

زیورمیتھنگا کے مطابق ، زیونا اپنے گھر والوں کے ساتھ میزورم کے ایک دور دراز گاؤں بکتاونگ میں ایک وسیع و عریض ، چار منزلہ گلابی ڈھانچے والی عمارت میں رہتے تھے ان کی وجہ سے یہ علاقہ سیاحوں کی توجہ کا مرکز بن گیا تھا ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button