کاروں کی مالیت میں 63 فیصد تک کمی

حکومت  نے بجٹ میں گاڑیاں امپورٹ کرنے کے لیے نئی ایمنسٹی اسکیم متعارف کرانے کی ایک تجویز پیش کی ہے۔

ایف بی آر ذرائع کے مطابق اس نئی ایمنسٹی اسکیم کے بعد  3سال پرانی موٹر کاروں  اور جیپوں کے بجائے 5 سال پرانی کاروں اور جیپوں کو  امپورٹ کیا جاسکے گا۔

واضح رہے کہ موجودہ جو  ایمنسٹی اسکیم چل رہی ہے اسکے تحت 3 سال پرانی گاڑیوں کی درآمد کی اجازت ہے تاہم نئی اسکیم کی منظوری کے بعد  عام افراد کو 5 سال تک پرانی گاڑیاں امپورٹ کرنے سے مالی طور پر خاطر خواہ فائدہ ہوگا۔

 علاوہ ازیں حکومت آئندہ بجٹ میں 800 سی سی انجن والی نئی درآمدی اور مقامی طور پر ذخیرہ کاروں پر ٹیکس کم کرنے پر  بھی غور کر رہی ہے جس کا مقصد انہیں متوسط ​​طبقے کی قوت خرید میں لانا ہے۔

مقامی طور پر تیار شدہ کاریں

ذرائع کے مطابق نئی درآمدی کاروں پر درآمدی محصولات اور ٹیکسوں میں 63 فیصد تک کمی اور مقامی طور پر تیار شدہ کاروں کے لئے ان میں تقریبا 7 فیصد تک کمی لانے کی بھی تجویز آئندہ بجٹ کے لیے زیر غور ہے،اس تجویز میں 50 فیصد ریگولیٹری ڈیوٹی ختم کرنا ، 7 فیصد اضافی کسٹم ڈیوٹی کو ختم کرنا یا کسٹم ڈیوٹی کو اسی فیصد سے کم کرنا اور نئی درآمدی کاروں پر 2.5 فیصد فیڈرل ایکسائز ڈیوٹی ختم کرنا شامل ہے۔

اس کے علاوہ 800 سی سی تک نئی کاروں کی درآمد پر 5 فیصد ود ہولڈنگ ٹیکس کو ختم کرنے اور معیاری جنرل سیلز ٹیکس (جی ایس ٹی) کی شرح کو 17 فیصد سے کم کرکے 12 فیصد کرنے کی بھی تجویز ہے،800 سی سی تک نئی امپورٹڈ کاروں پر موجودہ مشترکہ ٹیکس اور ڈیوٹی لگ بھگ قیمت کے 132 ٪  ہے  تواگر اس تجویز پر عمل درآمد ہوتا ہے تو ، درآمد شدہ کاروں کی مالیت میں 63 فیصد تک کمی آجائے گی۔

مزید براں آنے والے بجٹ میں امپورٹ خام مال پر بھی کسٹم ڈیوٹی ختم کرنے کی  تجویز زیر غور ہے۔

بجٹ میں امپورٹ مشینری کی مد میں کسٹم ڈیوٹی  پر رعایت کیے جانے کی تجویز بھی دی گئی ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button